محکمہ ایکسائز کا سسٹم خراب 3 ماہ کا فٹنس سرٹیفکیٹ ریکارڈ غائب پنجاب بھر کے ٹرانسپورٹرز رل گئے ، روٹ پرمٹ کا اجرا بالکل بند ھو گیا ھے، چیئر مین متحدہ ٹرانسپورٹ پاکستان ماہانہ جرمانے مد میں ہزاروں روپے وصول کیے جارہے ہیں، جو ٹرانسپورٹرز کیساتھ زیادتی ،نا انصافی ہے، راجہ محمد ریاض مزدور ڈرائیور طبقہ پر جرمانے اور اپنے ریکارڈ غائب اور کمپیوٹر سسٹم کی خرابی پنجاب حکومت کی نا اہلی کا منہ بولتا ثبوت ھے، بیان راولپنڈی رپورٹر فاروق احمد) محکمہ ایکسائز کا سسٹم خراب 3 ماہ کا فٹنس سرٹیفکیٹ ریکارڈ غائب پنجاب کے ٹرانسپورٹرز رل کے روٹ پرمٹ کا اجرا بند مالکان کا شدید احتجاج تفصیلات کے مطابق چیر مین متحدہ ٹرانسپورٹ پاکستان راجہ محمد ریاض نے اپنے ایک بیان میں کہا کے محکمہ ایکسائز کے کمپیوٹر کسٹم میں خرابی کے باعث 3 ماہ کا سرٹیفکیٹ ریکارڈ غائب جس کی وجہ سے پنجاب بھر کے ٹرانسپورٹرز رب گے روٹ پرمٹ کا اجرا بالکل بند ھو گیا ھے ٹرانسپورٹرز کا ٹرانسپورٹ ہاوس میں احتجاج سیکرٹری ٹرانسپورٹ کو فوری نوٹس لینے کا مطالبہ محکمہ ٹرانسپورٹ میں روٹ پرمٹ اور فنس کے اجر اسم محکمہ ایکسائز کے ساتھ لنک ھے جبکہ 6 ستمبر سے محکمہ ایکسائز کا کمپیوٹر سسٹم خراب ہے جس کے باعث ایسے تمام ٹرانسپورٹرز جو کہ وکس کمپنی سے مارچ اپریل 2023 میں فٹنس حاصل کر چکے ہیں جب وہ محکمہ ٹرانسپورٹ کے پاس جاتے ہیں تو ریکارڈ ان لائن نہ ھونے کی وجہ سے روٹ پرمٹ کا اجر انہیں ھو سکتا اسی طرح ستمبر سے اب تک کا ریکارڈ بھی غائب ہے جس کے لے ٹرانسپورٹ کے ملازمین کی جانب سے متعدد بارڈائر یکٹرائی ٹی عاصم سے کہا گیا جنہوں نے اگاہ کیا کہ محکمہ ایکسائز کا کمپیوٹر سسٹم خراب ھے جب تک درست نہیں ھوگا کچھ نہیں ھو سکتا جس پر گزشتہ روز ٹرانسپورٹروں نے احتجاج کیا اس وقت لاھور پی ٹی اے افس میں 500 سے زائد کیس پینڈنگ ہیں جس سے تمام اضلاع میں روٹ پرمٹ کا اجرا امکمل رک گیا دوسی طرف ٹرانسپورٹروں کو بھاری جرمانے عائد ہو رہے ہیں اس حوالے سے ڈائریکٹر ائی ئی عاصم نے کہا ھے کے معاملہ سیکرٹری ٹرانسپورٹ ڈاکٹر احمد جاوید قاضی کے سامنے رکھ دیا ہے چیرمین متحدہ ٹرانسپورٹ پاکستان راجہ ریاض احمد نے کہا ان سارے مسائل میں ٹرانسپورٹروں سے آئے روز جرمانے کی مد میں 300 روپے وصول کر لیے جاتے ہیں اور ماہانہ جرمانے مد میں ہزاروں روپے وصول کیے جار ہے ہیں اس کمر توڑ مہنگائی میں اس قدر مزدور ڈرائیور طبقہ پر جرمانے اور اپنے ریکارڈ غائب اور کمپوٹر سسٹم کی خرابی پنجاب حکومت کی نا اہلی کا منہ بولتا ثبوت ھے جو کہ ٹرانسپورٹرز کے ساتھ بہت بڑی زیادتی اور نا انصافی سے نہ صرف یہ کہ بلکہ اس چند روز پہلے بھی چیر مین متحدہ ٹرانسپورٹ پاکستان راجہ ریاض احمد نے اپنے ایک بیان میں کہا کے راولپنڈی اور اسلام آباد جڑواں شہر ہیں اور اسلام اباد دارالخلافہ ہے اسلام آباد کے فٹنس سرٹیفکیٹ کو پنجاب حکومت نہیں مان رہی جس پر صوبائی محتسب پنجاب نے نوٹس لے لیا ہے 45

محکمہ ایکسائز کا سسٹم خراب 3 ماہ کا فٹنس سرٹیفکیٹ ریکارڈ غائب

محکمہ ایکسائز کا سسٹم خراب 3 ماہ کا فٹنس سرٹیفکیٹ ریکارڈ غائب
پنجاب بھر کے ٹرانسپورٹرز رل گئے ، روٹ پرمٹ کا اجرا بالکل بند ھو گیا ھے، چیئر مین متحدہ ٹرانسپورٹ پاکستان
ماہانہ جرمانے مد میں ہزاروں روپے وصول کیے جارہے ہیں، جو ٹرانسپورٹرز کیساتھ زیادتی ،نا انصافی ہے، راجہ محمد ریاض
مزدور ڈرائیور طبقہ پر جرمانے اور اپنے ریکارڈ غائب اور کمپیوٹر سسٹم کی خرابی پنجاب حکومت کی نا اہلی کا منہ بولتا ثبوت ھے، بیان
راولپنڈی رپورٹر فاروق احمد) محکمہ ایکسائز کا سسٹم خراب 3 ماہ کا فٹنس سرٹیفکیٹ ریکارڈ غائب پنجاب کے ٹرانسپورٹرز رل کے روٹ پرمٹ کا اجرا بند مالکان کا شدید احتجاج تفصیلات کے مطابق چیر مین متحدہ ٹرانسپورٹ پاکستان راجہ محمد ریاض نے اپنے ایک بیان میں کہا کے محکمہ ایکسائز کے کمپیوٹر کسٹم میں خرابی کے باعث 3 ماہ کا سرٹیفکیٹ ریکارڈ غائب جس کی وجہ سے پنجاب بھر کے ٹرانسپورٹرز رب گے روٹ پرمٹ کا اجرا بالکل بند ھو گیا ھے ٹرانسپورٹرز کا ٹرانسپورٹ ہاوس میں احتجاج سیکرٹری ٹرانسپورٹ کو فوری نوٹس لینے کا مطالبہ محکمہ ٹرانسپورٹ میں روٹ پرمٹ اور فنس کے اجر اسم محکمہ ایکسائز کے ساتھ لنک ھے جبکہ 6 ستمبر سے محکمہ ایکسائز کا کمپیوٹر سسٹم خراب ہے جس کے باعث ایسے تمام ٹرانسپورٹرز جو کہ وکس کمپنی سے مارچ اپریل 2023 میں فٹنس حاصل کر چکے ہیں جب وہ محکمہ ٹرانسپورٹ کے پاس جاتے ہیں تو ریکارڈ ان لائن نہ ھونے کی وجہ سے روٹ پرمٹ کا اجر انہیں ھو سکتا اسی طرح ستمبر سے اب تک کا ریکارڈ بھی غائب ہے جس کے لے ٹرانسپورٹ کے ملازمین کی جانب سے متعدد بارڈائر یکٹرائی ٹی عاصم سے کہا گیا جنہوں نے اگاہ کیا کہ محکمہ ایکسائز کا کمپیوٹر سسٹم خراب ھے جب تک درست نہیں ھوگا کچھ نہیں ھو سکتا جس پر گزشتہ روز ٹرانسپورٹروں نے احتجاج کیا اس وقت لاھور پی ٹی اے افس میں 500 سے زائد کیس پینڈنگ ہیں جس سے تمام اضلاع میں روٹ پرمٹ کا اجرا امکمل رک گیا دوسی طرف ٹرانسپورٹروں کو بھاری جرمانے عائد ہو رہے ہیں اس حوالے سے ڈائریکٹر ائی ئی عاصم نے کہا ھے کے معاملہ سیکرٹری ٹرانسپورٹ ڈاکٹر احمد جاوید قاضی کے سامنے رکھ دیا ہے چیرمین متحدہ ٹرانسپورٹ پاکستان راجہ ریاض احمد نے کہا ان سارے مسائل میں ٹرانسپورٹروں سے آئے روز جرمانے کی مد میں 300 روپے وصول کر لیے جاتے ہیں اور ماہانہ جرمانے مد میں ہزاروں روپے وصول کیے جار ہے ہیں اس کمر توڑ مہنگائی میں اس قدر مزدور ڈرائیور طبقہ پر جرمانے اور اپنے ریکارڈ غائب اور کمپوٹر
سسٹم کی خرابی پنجاب حکومت کی نا اہلی کا منہ بولتا ثبوت ھے جو کہ ٹرانسپورٹرز کے ساتھ بہت بڑی زیادتی اور نا انصافی سے نہ صرف یہ کہ بلکہ اس چند روز پہلے بھی چیر مین متحدہ ٹرانسپورٹ پاکستان راجہ ریاض احمد نے اپنے ایک بیان میں کہا کے راولپنڈی اور اسلام آباد جڑواں شہر ہیں اور اسلام اباد دارالخلافہ ہے اسلام آباد کے فٹنس سرٹیفکیٹ کو پنجاب حکومت نہیں مان رہی جس پر صوبائی محتسب پنجاب نے نوٹس لے لیا ہے

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں